It is currently Tue Dec 12, 2017 1:26 pm

All times are UTC + 5 hours




 Page 1 of 1 [ 27 posts ] 
Author Message
 Post subject: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sat Feb 01, 2014 3:20 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
دھوتا ہوں جب میں پینے کو اس سیم تن کے پاؤں


دھوتا ہوں جب میں پینے کو اس سیم تن کے پاؤں
رکھتا ہے ضد سے کھینچ کے باہر لگن کے پاؤں

دی سادگی سے جان پڑوں کوہکن کے پاؤں
ہیہات کیوں نہ ٹوٹ گیے پیر زن کے پاؤں

بھاگے تھے ہم بہت۔ سو، اسی کی سزا ہے یہ
ہو کر اسیر دابتے ہیں راہ زن کے پاؤں

مرہم کی جستجو میں پھرا ہوں جو دور دور
تن سے سوا فِگار ہیں اس خستہ تن کے پاؤں

اللہ رے ذوقِ دشت نوردی کہ بعدِ مرگ
ہلتے ہیں خود بہ خود مرے، اندر کفن کے، پاؤں

ہے جوشِ گل بہار میں یاں تک کہ ہر طرف
اڑتے ہوئے الجھتے ہیں مرغِ چمن کے پاؤں

شب کو کسی کے خواب میں آیا نہ ہو کہیں
دکھتے ہیں آج اس بتِ نازک بدن کے پاؤں

غالب مرے کلام میں کیوں کر مزہ نہ ہو
پیتا ہوں دھو کے خسروِ شیریں سخن کے پاؤں


مرزا غالب



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sat Feb 01, 2014 3:27 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
لطفِ نظّارۂ قاتِل دمِ بسمل آۓ


لطفِ نظّارۂ قاتِل دمِ بسمل آۓ
جان جاۓ تو بلا سے، پہ کہیں دِل آۓ

ان کو کیا علم کہ کشتی پہ مری کیا گزری
دوست جو ساتھ مرے تا لبِ ساحل آۓ

وہ نہیں ہم، کہ چلے جائیں حرم کو، اے شیخ!
ساتھ حُجّاج کے اکثر کئی منزِل آۓ

آئیں جس بزم میں وہ، لوگ پکار اٹھتے ہیں
"لو وہ برہم زنِ ہنگامۂ محفل آۓ"

دیدہ خوں بار ہے مدّت سے، ولے آج ندیم
دل کے ٹکڑے بھی کئی خون کے شامل آۓ

سامنا حور و پری نے نہ کیا ہے، نہ کریں
عکس تیرا ہی مگر، تیرے مقابِل آۓ

اب ہے دِلّی کی طرف کوچ ہمارا غالب!
آج ہم حضرتِ نوّاب سے بھی مِل آۓ


مرزا غالب



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sat Feb 01, 2014 3:29 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
آپ نے مَسَّنی الضُّر کہا ہے تو سہی


آپ نے مَسَّنی الضُّر کہا ہے تو سہی
یہ بھی اے حضرتِ ایّوب! گِلا ہے تو سہی

رنج طاقت سے سوا ہو تو نہ پیٹوں کیوں سر
ذہن میں خوبئِ تسلیم و رضا ہے تو سہی

ہے غنیمت کہ بہ اُمّید گزر جاۓ گی عُمر
نہ ملے داد، مگر روزِ جزا ہے تو سہی

دوست ہی کوئی نہیں ہے، جو کرے چارہ گری
نہ سہی، لیک تمنّاۓ دوا ہے تو سہی

غیر سے دیکھیے کیا خوب نباہی اُس نے
نہ سہی ہم سے، پر اُس بُت میں وفا ہے تو سہی

نقل کرتا ہوں اسے نامۂ اعمال میں مَیں
کچھ نہ کچھ روزِ ازل تم نے لکھا ہے تو سہی

کبھی آ جاۓ گی کیوں کرتے ہو جلدی غالب
شہرۂ تیزئِ شمشیرِ قضا ہے تو سہی


مرزا غالب



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 02, 2014 10:28 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
کبھی فلک کو پڑا دل جلوں سے کام نہیں



کبھی فلک کو پڑا دل جلوں سے کام نہیں
اگر نہ آگ لگادوں تو داغ نام نہیں

وفور یاس نے یہاں کام ہے تمام کیا
زبان یار سے نکلی تھی نا تمام نہیں

وہ کاش وصل کے انکار پر ہی قائم ہوں
مگر انہیں تو کسی بات پر قیام نہیں

الہٰی تو نے حسینوں کو کیوں کیا پیدا
کچھ ان کی ذات سے دنیا کا انتظام نہیں

سنائی جاتی ہیں در پردہ گالیاں مجھ کو
جو میں کہوں تو کہیں آپ سے کلام نہیں

وہ آئیں گے شب وعدہ، یقیں نہیں اے دل
چراغ گھی کے جلاؤں ، یہ ایسی شام نہیں

سوائے جور و جفا، ماورائے بغض و دغا
بتوں کے واسطے دنیا میں کوئی کام نہیں

پیئوں ، پلاؤں تجھے، دور ہی سے ترساؤں
یہ روز عید ہے زاہد، مہ صیام نہیں

دباؤ کیا ہے، سنے وہ جو آپ کی باتیں
رئیس زادہ ہے داغ، آپ کا غلام نہیں


داغ دہلوی



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 02, 2014 10:33 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
سبب کھلا یہ ہمیں ان کے منہ چھپانے کا


سبب کھلا یہ ہمیں ان کے منہ چھپانے کا
اڑا نہ لے کوئی انداز مسکرانے کا

طریقِ خوب ہے یہ عمر کے بڑھانے کا
کہ منتظر رہوں تا حشر اس کے آنے کا

چڑھاؤ پھول مری قبر پر جو آئے ہو
کہ اب زمانہ گیا تیوری چڑھانے کا

وہ عذر ِجرم کو بدتر گناہ سے سمجھے
کوئی محل نہ رہا اب قسم کھانے کا

بہ تنگ آکے جو کی میں نے ترک رسمِ وفا
ہر اک سے کہتے ہیں یہ حال ہے زمانے کا

جفائیں کرتے ہیں تھم تھم کے اس خیال سے وہ
گیا تو پھر نہیں یہ میرے ہاتھ آنے کا

نہ سوچے ہم کہ تہِ تیغ ہوگی خلق اللہ
گھٹا نہ حوصلہ قاتل کے دل بڑھانے کا

اثر ہے اب کے مئے تند میں وہ اے زاہد
کہ نقشہ تک بھی نہ اترے شراب خانے کا

سمائیں اپنی نگاہوں میں ایسے ویسے کیا
رقیب ہی سہی، ہو آدمی ٹھکانے کا

لگی ہے چاٹ مجھے تلخیء محبت کی
علاج زہر سے مشکل ہے زہر کھانے کا

تمہیں رقیب نے بھیجا کھلا ہوا پرچہ
نہ تھا نصیب لفافہ بھی آدھ آنے کا

لگی ٹھکانے سے بلبل کی خانہ بربادی
چراغ ِگل میں بھی تنکا ہے آشیانے کا

خطا معاف، تم اے داغ اور خواہشِ وصل
قصور ہے یہ فقط ان کے منہ لگانے کا


داغ دہلوی



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 02, 2014 10:42 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
کہا نہ کچھ عرض مدعا پر، وہ لے رہے دم کو مسکرا کر



کہا نہ کچھ عرض مدعا پر، وہ لے رہے دم کو مسکرا کر
سنا کے حال چپکے چپکے، نظر اُٹھائی نہ سر اُٹھا کر

نہ طور دیکھے، نہ رنگ برتے غضب میں آیا ہوں دل لگا کر
وگر نہ دیتا ہے دل زمانہ یہ آزما کر، وہ آزما کر

تری محبت نے مار ڈالا ہزار ایذا سے مجھ کو ظالم
رُلا رُلا کر، گھلا گھلا کر، جلا جلا کر، مٹا مٹا کر

تمہیں تو ہو جو کہ خواب میں ہو، تمہیں تو ہو جو خیال میں ہو
کہاں چلے آنکھ میں سما کر، کدھر کو جاتے ہو دل میں آکر

ستم کہ جو لذت آشنا ہوں، کرم سے بے لطف، بے مزا ہوں
جو تو وفا بھی کرے تو ظالم یہ ہو تقاضا کہ پھر جفا کر

شراب خانہ ہے یہ تو زاہد، طلسم خانہ نہیں جو ٹوٹے
کہ توبہ کر لی گئی ہے توبہ ابھی یہاں سے شکست پاکر

نگہ کو بیباکیاں سکھاؤ، حجاب شرم و حیا اُٹھاؤ
بھلا کے مارا تو خاک مارا، لگاؤ چوٹیں جتا جتا کر

نہ ہر بشر کا جمال ایسا، نہ ہر فرشتے کا حال ایسا
کچھ اور سے اور ہو گیا تو مری نظر میں سما سما کر

خدا کا ملنا بہت ہے آساں، بتوں کا ملنا ہے سخت مشکل
یقیں نہیں‌ گر کسی کو ہمدم تو کوئی لائے اُسے منا کر

الہٰی قاصد کی خیر گذرے کہ آج کوچہ سے فتنہ گر کے
صبا نکلتی ہے لڑکھڑا کر، نسیم چلتی ہے تھرتھرا کر

جناب! سلطانِ عشق وہ ہے کرے جو اے داغ اک اشارہ
فرشتے حاضر ہوں دست بستہ ادب سے گردن جھکا جھکا کر


داغ دھلوی



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 02, 2014 7:26 pm 
Super Dooper Member

Joined: Fri Jun 18, 2010 10:52 am
Posts: 37048
Hammad Abbas... jitni bhi ghazaleN aap ne post ki haiN, sub aik se barrh ker aik haiN aur bohat se ashaar dil ko chhu gaye... Daagh Dahelvi ki ghazaleN ziada mann ko bhhayiN... Ghalib ki pehli ghazal mujhe pasand hai... apni pasand humare saath share kerte raheN, sadaa shaad aur aabaad raheN...
:)O



_________________
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Mon Feb 03, 2014 7:01 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
بہت شکریہ جناب! میری پسند کو پسند کیا۔ خوشی ہوئی



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Mon Feb 03, 2014 10:59 pm 
Moderator
User avatar

Joined: Tue Jun 14, 2011 11:13 pm
Posts: 4607
Location: DG KHAN
Beautiful_Liar wrote:
لطفِ نظّارۂ قاتِل دمِ بسمل آۓ


لطفِ نظّارۂ قاتِل دمِ بسمل آۓ
جان جاۓ تو بلا سے، پہ کہیں دِل آۓ

ان کو کیا علم کہ کشتی پہ مری کیا گزری
دوست جو ساتھ مرے تا لبِ ساحل آۓ

وہ نہیں ہم، کہ چلے جائیں حرم کو، اے شیخ!
ساتھ حُجّاج کے اکثر کئی منزِل آۓ

آئیں جس بزم میں وہ، لوگ پکار اٹھتے ہیں
"لو وہ برہم زنِ ہنگامۂ محفل آۓ"

دیدہ خوں بار ہے مدّت سے، ولے آج ندیم
دل کے ٹکڑے بھی کئی خون کے شامل آۓ

سامنا حور و پری نے نہ کیا ہے، نہ کریں
عکس تیرا ہی مگر، تیرے مقابِل آۓ

اب ہے دِلّی کی طرف کوچ ہمارا غالب!
آج ہم حضرتِ نوّاب سے بھی مِل آۓ


مرزا غالب

wah kyaa hi khobsorat gazal hai :b)b: . . . bahut khob :)O
tamaam sharing se aap ka aala zauq zahir hota hai.



_________________
Image

اگر غم سے بهی آگ کی طرح دهواں نکلتا تو جہاں ہمیشہ تاریک رہتا
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 09, 2014 2:57 am 
Moderator
User avatar

Joined: Sun Dec 02, 2007 5:08 am
Posts: 17677
Location: Data Ke Nagri
tamam sharings bohat umda hain :b)b:
keep sharing :buke:



_________________
Image

Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 09, 2014 11:11 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
آپ سب احباب کا دل سے ممنون ہوں۔



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 09, 2014 11:12 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
ہستی اپنی حباب کی سی ہے
یہ نمائش سراب کی سی ہے
نازکی اُس کے لب کی کیا کہئیے
پنکھڑی اِک گلاب کی سی ہے
بار بار اُس کے در پہ جاتا ہوں
حالت اب اضطراب کی سی ہے
میں جو بولا، کہا کہ یہ آواز
اُسی خانہ خراب کی سی ہے
میر اُن نیم باز آنکھوں میں
ساری مستی شراب کی سی ہے

شاعر میر تقی میر



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 09, 2014 11:13 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
بے کلی، بے خودی کچھ آج نہیں
ایک مدت سے وہ مزاج نہیں
درد اگر یہ ہے تو مجھے بس ہے
اب دوا کی کچھ احتیاج نہیں
ہم نے اپنی سی کی بہت لیکن
مرضِ عشق کا علاج نہیں
شہرِ خوبی کو خوب دیکھا میر
جنسِ دل کا کہیں رواج نہیں

شاعر میر تقی میر



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 09, 2014 11:15 am 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
تا بہ مقدور انتظار کیا
دل نے اب زور بے قرار کیا
دشمنی ہم سے کی زمانے نے
کہ جفاکار تجھ سا یار کیا
یہ توہم کا کارخانہ ہے
یاں وہی ہے جو اعتبار کیا
ایک ناوک نے اس کی مژگاں کے
طائرِ سدرہ تک شکار کیا
ہم فقیروں سے بے ادائی کیا
آن بیٹھے جو تم نے پیار کیا
سخت کافر تھا جن نے پہلے میر
مذہبِ عشق اختیار کیا


شاعر میر تقی میر



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Sun Feb 09, 2014 2:43 pm 
Moderator
User avatar

Joined: Tue Jun 14, 2011 11:13 pm
Posts: 4607
Location: DG KHAN
bahut bahut bahut khobsorat intakhab hai janab ka :b)b: wah bahut si daad qabol kijiye :)O :)O :)O



_________________
Image

اگر غم سے بهی آگ کی طرح دهواں نکلتا تو جہاں ہمیشہ تاریک رہتا
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Mon Feb 10, 2014 8:07 pm 
Super Dooper Member

Joined: Fri Jun 18, 2010 10:52 am
Posts: 37048
Beautiful_Liar wrote:
ہستی اپنی حباب کی سی ہے
یہ نمائش سراب کی سی ہے
نازکی اُس کے لب کی کیا کہئیے
پنکھڑی اِک گلاب کی سی ہے
بار بار اُس کے در پہ جاتا ہوں
حالت اب اضطراب کی سی ہے
میں جو بولا، کہا کہ یہ آواز
اُسی خانہ خراب کی سی ہے
میر اُن نیم باز آنکھوں میں
ساری مستی شراب کی سی ہے

شاعر میر تقی میر

is mashoor ko ghazal ko shaamil_e_mahfil kerne per shukariguzaar hoN... :)O



_________________
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Mon Feb 10, 2014 8:08 pm 
Super Dooper Member

Joined: Fri Jun 18, 2010 10:52 am
Posts: 37048
Beautiful_Liar wrote:
تا بہ مقدور انتظار کیا
دل نے اب زور بے قرار کیا
دشمنی ہم سے کی زمانے نے
کہ جفاکار تجھ سا یار کیا
یہ توہم کا کارخانہ ہے
یاں وہی ہے جو اعتبار کیا
ایک ناوک نے اس کی مژگاں کے
طائرِ سدرہ تک شکار کیا
ہم فقیروں سے بے ادائی کیا
آن بیٹھے جو تم نے پیار کیا
سخت کافر تھا جن نے پہلے میر
مذہبِ عشق اختیار کیا


شاعر میر تقی میر

ye ghazal bhi achhi hai... :)O



_________________
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 7:45 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
kash11 wrote:
bahut bahut bahut khobsorat intakhab hai janab ka :b)b: wah bahut si daad qabol kijiye :)O :)O :)O


بہت شکریہ جناب! آپ کے ان "خوبصورت" الفاظ کا ہمیشہ ممنون رہوں گا۔



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 7:49 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
тнє ѕ๏lιтαяу wrote:
Beautiful_Liar wrote:
ہستی اپنی حباب کی سی ہے
یہ نمائش سراب کی سی ہے
نازکی اُس کے لب کی کیا کہئیے
پنکھڑی اِک گلاب کی سی ہے
بار بار اُس کے در پہ جاتا ہوں
حالت اب اضطراب کی سی ہے
میں جو بولا، کہا کہ یہ آواز
اُسی خانہ خراب کی سی ہے
میر اُن نیم باز آنکھوں میں
ساری مستی شراب کی سی ہے

شاعر میر تقی میر

is mashoor ko ghazal ko shaamil_e_mahfil kerne per shukariguzaar hoN... :)O


ارے کیوں شرمندہ کرتے ہیں جناب۔ شکریہ تو مجھے آپ کا کرنا ہے جو میرے انتخاب کو وقت دیا اور سراہا۔



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 7:50 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
тнє ѕ๏lιтαяу wrote:
Beautiful_Liar wrote:
تا بہ مقدور انتظار کیا
دل نے اب زور بے قرار کیا
دشمنی ہم سے کی زمانے نے
کہ جفاکار تجھ سا یار کیا
یہ توہم کا کارخانہ ہے
یاں وہی ہے جو اعتبار کیا
ایک ناوک نے اس کی مژگاں کے
طائرِ سدرہ تک شکار کیا
ہم فقیروں سے بے ادائی کیا
آن بیٹھے جو تم نے پیار کیا
سخت کافر تھا جن نے پہلے میر
مذہبِ عشق اختیار کیا


شاعر میر تقی میر

ye ghazal bhi achhi hai... :)O


بہت شکریہ جناب!



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 7:51 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا
جو ہاتھ جگر پر ہے وہ دستِ دعا ہوتا
اک عشق کا غم آفت اور اس پہ یہ دل آفت
یا غم نہ دیا ہوتا، یا دل نہ دیا ہوتا
غیروں سے کہا تم نے، غیروں سے سنا تم نے
کچھ ہم سے کہا ہوتا، کچھ ہم سے سنا ہوتا
امید تو بندھ جاتی، تسکین تو ہو جاتی
وعدہ نہ وفا کرتے، وعدہ تو کیا ہوتا
ناکامِ تمنا دل، اس سوچ میں رہتا ہے
یوں ہوتا تو کیا ہوتا، یوں ہوتا تو کیا ہوتا

شاعر چراغ حسن حسرت



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 7:55 pm 
Junior Member

Joined: Mon Sep 14, 2009 9:16 pm
Posts: 56
اب تو گھبرا کے یہ کہتے ہیں کہ مر جائیں گے
مر کے بھی چین نہ پایا تو کدھر جائیں گے
سامنے چشم گہر بار کے کہہ دو دریا
چڑھ کے گر آئے تو نظروں سے اتر جائیں گے
لائے جو مست ہیں تربت پہ گلابی آنکھیں
اور اگر کچھ نہیں دو پھول تو دھر جائیں گے
بچیں گے رہ گزر یار تلک کیونکر ہم
پہلے جب تک نہ دو عالم سے گزر جائیں گے
آگ دوزخ کی بھی ہو جائے گی پانی پانی
جب یہ عاصی عرق شرم سے تر جائیں گے
ہم نہیں وہ جو کریں خون کا دعویٰ تجھ سے
بلکہ پوچھے گا خدا بھی تو مکر جائیں گے
رخِ روشن سے نقاب اپنے الٹ دیکھو تم
مہر و مہ نظروں سے یاروں کی اتر جائیں گے
شعلہ آہ کو بجلی کی طرح چمکاؤں
پر یہی ڈر ہے کہ وہ دیکھ کے ڈر جائیں گے
ذوق جو مدرسہ کے بگڑے ہوئے ہیں مُلا
ان کو مہ خانہ میں لے آؤ سنور جائیں گے


شاعر ابراہیم ذوق



_________________
حماد عباس

Image
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 11:22 pm 
Moderator
User avatar

Joined: Tue Jun 14, 2011 11:13 pm
Posts: 4607
Location: DG KHAN
Beautiful_Liar wrote:
یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا
جو ہاتھ جگر پر ہے وہ دستِ دعا ہوتا
اک عشق کا غم آفت اور اس پہ یہ دل آفت
یا غم نہ دیا ہوتا، یا دل نہ دیا ہوتا
غیروں سے کہا تم نے، غیروں سے سنا تم نے
کچھ ہم سے کہا ہوتا، کچھ ہم سے سنا ہوتا
امید تو بندھ جاتی، تسکین تو ہو جاتی
وعدہ نہ وفا کرتے، وعدہ تو کیا ہوتا
ناکامِ تمنا دل، اس سوچ میں رہتا ہے
یوں ہوتا تو کیا ہوتا، یوں ہوتا تو کیا ہوتا

شاعر چراغ حسن حسرت

bahut dilkash gazal :b)b: , meri bahut hi pasndeedah :)O , bahut shukriyaa share karna ke liye , hamesha khush rahen :dua Aameen
:rose: :rose: :rose: :rose: :rose:



_________________
Image

اگر غم سے بهی آگ کی طرح دهواں نکلتا تو جہاں ہمیشہ تاریک رہتا
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Tue Feb 11, 2014 11:24 pm 
Moderator
User avatar

Joined: Tue Jun 14, 2011 11:13 pm
Posts: 4607
Location: DG KHAN
Beautiful_Liar wrote:
اب تو گھبرا کے یہ کہتے ہیں کہ مر جائیں گے
مر کے بھی چین نہ پایا تو کدھر جائیں گے
سامنے چشم گہر بار کے کہہ دو دریا
چڑھ کے گر آئے تو نظروں سے اتر جائیں گے
لائے جو مست ہیں تربت پہ گلابی آنکھیں
اور اگر کچھ نہیں دو پھول تو دھر جائیں گے
بچیں گے رہ گزر یار تلک کیونکر ہم
پہلے جب تک نہ دو عالم سے گزر جائیں گے
آگ دوزخ کی بھی ہو جائے گی پانی پانی
جب یہ عاصی عرق شرم سے تر جائیں گے
ہم نہیں وہ جو کریں خون کا دعویٰ تجھ سے
بلکہ پوچھے گا خدا بھی تو مکر جائیں گے
رخِ روشن سے نقاب اپنے الٹ دیکھو تم
مہر و مہ نظروں سے یاروں کی اتر جائیں گے
شعلہ آہ کو بجلی کی طرح چمکاؤں
پر یہی ڈر ہے کہ وہ دیکھ کے ڈر جائیں گے
ذوق جو مدرسہ کے بگڑے ہوئے ہیں مُلا
ان کو مہ خانہ میں لے آؤ سنور جائیں گے


شاعر ابراہیم ذوق

acha laga ye intakhaab bhi :)O



_________________
Image

اگر غم سے بهی آگ کی طرح دهواں نکلتا تو جہاں ہمیشہ تاریک رہتا
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Wed Feb 12, 2014 12:43 am 
Moderator
User avatar

Joined: Sun Dec 02, 2007 5:08 am
Posts: 17677
Location: Data Ke Nagri
Hammad sab tamam sharings bohat umda aur lajawab hain ... :b)b: :buke: keep sharings :buke: :buke: :buke:



_________________
Image

Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Thu Feb 13, 2014 12:59 am 
Super Dooper Member

Joined: Fri Jun 18, 2010 10:52 am
Posts: 37048
Beautiful_Liar wrote:
یا رب غمِ ہجراں میں اتنا تو کیا ہوتا
جو ہاتھ جگر پر ہے وہ دستِ دعا ہوتا
اک عشق کا غم آفت اور اس پہ یہ دل آفت
یا غم نہ دیا ہوتا، یا دل نہ دیا ہوتا
غیروں سے کہا تم نے، غیروں سے سنا تم نے
کچھ ہم سے کہا ہوتا، کچھ ہم سے سنا ہوتا
امید تو بندھ جاتی، تسکین تو ہو جاتی
وعدہ نہ وفا کرتے، وعدہ تو کیا ہوتا
ناکامِ تمنا دل، اس سوچ میں رہتا ہے
یوں ہوتا تو کیا ہوتا، یوں ہوتا تو کیا ہوتا

شاعر چراغ حسن حسرت

wahhhh, meri bohat pasandeeda aur maroof ghazal ko muntakhab kiya apne thread k liye... shukariya janaab is dilkash ghazal k liye...
:)O



_________________
Image
Offline
 Profile  
 
 Post subject: Re: khob hy shouq ka ye pehloo bhi :-
PostPosted: Thu Feb 13, 2014 1:33 am 
Super Dooper Member

Joined: Fri Jun 18, 2010 10:52 am
Posts: 37048
Beautiful_Liar wrote:
اب تو گھبرا کے یہ کہتے ہیں کہ مر جائیں گے
مر کے بھی چین نہ پایا تو کدھر جائیں گے
سامنے چشم گہر بار کے کہہ دو دریا
چڑھ کے گر آئے تو نظروں سے اتر جائیں گے
لائے جو مست ہیں تربت پہ گلابی آنکھیں
اور اگر کچھ نہیں دو پھول تو دھر جائیں گے
بچیں گے رہ گزر یار تلک کیونکر ہم
پہلے جب تک نہ دو عالم سے گزر جائیں گے
آگ دوزخ کی بھی ہو جائے گی پانی پانی
جب یہ عاصی عرق شرم سے تر جائیں گے
ہم نہیں وہ جو کریں خون کا دعویٰ تجھ سے
بلکہ پوچھے گا خدا بھی تو مکر جائیں گے
رخِ روشن سے نقاب اپنے الٹ دیکھو تم
مہر و مہ نظروں سے یاروں کی اتر جائیں گے
شعلہ آہ کو بجلی کی طرح چمکاؤں
پر یہی ڈر ہے کہ وہ دیکھ کے ڈر جائیں گے
ذوق جو مدرسہ کے بگڑے ہوئے ہیں مُلا
ان کو مہ خانہ میں لے آؤ سنور جائیں گے


شاعر ابراہیم ذوق

is mayanaaz ghazal ko shamil_e_mahfil kerne per dhair saari daad qubool kijiye, saare he ashaar bohat achhe haiN...
:)O



_________________
Image
Offline
 Profile  
 
Display posts from previous:  Sort by  
 Page 1 of 1 [ 27 posts ] 

All times are UTC + 5 hours


Who is online

Users browsing this forum: Google [Bot] and 1 guest


You cannot post new topics in this forum
You cannot reply to topics in this forum
You cannot edit your posts in this forum
You cannot delete your posts in this forum
You cannot post attachments in this forum

Jump to: